Hope in Urdu Poems by Darshita Babubhai Shah books and stories PDF | امید

امید

خواہشیں ٹوٹ رہی ہیں۔

میرے شو کی سازش ہے۔

بہت عرصے بعد ملے ہیں تو ایل

درخواستوں کی لمبی فہرست

میرا دل ریت کی طرح گرم ہو گیا ہے۔

میں محبت کی بارش کا انتظار کر رہا ہوں۔

میں نے اپنے ہاتھوں اور پیروں میں بیڑیاں ڈال دیں۔

نالوں کی پرواہ کیوں؟

محفل میں کوئی چیز دستک دے رہی ہے۔

میش کی تھوڑی سی کمی ہے۔

3-5-2022

شکایات - شکایات

آریش - سجاوٹ

,

آج اس کا نام آئے گا۔

آنکھوں میں سیلاب لے آئیں گے۔

محبت پڑھ کر

دل کا سکون ختم ہو جائے گا۔

الجھن کے احساس سے

آپ کب آرام کر سکیں گے؟

برامی کا نام لے کر

واپس چلے جائیں گے

اس کے آنے کی آواز پر

دل خوشی کے گیت گائے گا۔

2-5-2022

,

محفل میں شمع کے خواب روشن ہوتے ہیں۔

جیسے میرے دل کی یاد بھول گئی ہو۔

پریوں کی کہانیاں سن کر

ہم انہیں ہر روز یاد کرتے ہیں۔

میں ایک ساتھ گزارے لمحے بھول گیا تھا۔

بے وقت یاد اس کا رونا ہے۔

انہیں میری محبت کا احساس ہے۔

خدا کی قسمت میں بہت اچھا ہے۔

1-5 -2022

,

خاموشی زبان نہیں بولتی

دل دماغ کو ٹٹولتے ہیں۔

منحنی کے خانے میں بندھا

برسوں پرانے راز کھلیں گے۔

معصومیت سے پیار کر کے

محبت روح میں گھل جاتی ہے۔

30-4-2022

,

آؤ محبت کی شمع جلاتے ہیں۔

مجھے دل کی چنگاری دکھا

دل سے نفرت کو دور کرنے کے لیے

پھر میں دنیا کو جنت بنا دوں گا۔

تمام مرجھائے ہوئے چہروں کو

خوشی کی مسکراہٹ کے ساتھ سجانا

اب قدم بہ قدم ایل

کامیابی اور اضافہ

بھائی چارہ شروع کر دیں۔

ایک دوسرے کو گلے لگائیں

29-4-2022

,

میری محبت کو کبھی نہیں چھوڑنا

اپنے دل میں کبھی پناہ نہ دینا

آپ شروعات کریں، نتیجہ ہم دیں گے۔

گیت غزل کے لیے مصرا دینا

زندگی کے سفر میں نامعلوم ہے۔

ایک دو نہیں تو تیسرا جواب دیں۔

28-4-2022

,

حسن کو مجبوراً بھلا دیا گیا ہو گا۔

دل نے تمہیں بہت ستایا ہو گا۔

,

چہرہ نہیں دیکھتے

دل کی تڑپ دیکھوں گا۔

ہر طرف سراب پھیل جائے

سہارا میں پیاس دیکھوں گا۔

سمندر کی طرح گہرا

میں اپنی آنکھوں میں پانی دیکھوں گا۔

,

مت پوچھ تیرے بغیر وقت کیسے گزرتا ہے۔

آپ جیسے جائیں گے میں گزر جاؤں گا۔

لمحہ لمحہ رک گیا ہے۔

سال بہ سال ایسے ہی گزر جاتے ہیں۔

,

میں ہمیشہ تمہارے خاموش ہونٹوں کے ساتھ ہوں۔

تم نے رب سے مانگا ہے، میں دعا کروں گا۔

برسوں سے کہیں کھو گیا تھا۔

تیرے معصوم دل کا حال جانوں گا۔

,

آنکھوں میں شرم کا حجاب پہن لو۔

سنو، چہرے پر ماسک لگا لو۔

جب لوگوں کی انگلیاں بڑھنے لگیں۔

میں وقت پر مناسب جواب دوں گا۔

بہت سے کاشیشو روح میں ڈیرے ڈال چکے ہیں۔

اپنی خواہشات کی شراب اپنے دل میں رکھیں۔

,

ایک دن ایسا بھی آئے

تم یاد آتے ہی آؤ گے۔

آج میں محبت سے بچھڑ گیا ہوں۔

رات دن نہیں جائیں گے۔

,

درد حد سے بڑھتا جا رہا تھا۔

زبان پر تالہ لگا ہوا تھا۔

مظلوم مسکراتا تھا تو l

تابش نے اثر کیا ہوگا

تب سے میں درد اور غم سے وابستہ ہوں۔

میں آنسوؤں سے بھر جاتا تھا۔

21-4-2022

,

بتا مجھ میں کیا کمی ہے پیاری

مجھے تو یہ بھی نہیں معلوم کہ میرا دل قربان ہو گیا ہے۔

,

پھول جیسی محبت نے زندگی دی

میں شہزادی کی طرح زندگی گزاروں گا۔

,

کون ٹوٹنا چاہتا ہے؟

کون مرنا چاہتا ہے؟

کسی کا انتظار کرتے رہیں

صرف لوٹنا چاہنا اسے کہتے ہیں۔

,

Rate & Review

Be the first to write a Review!