the rain books and stories free download online pdf in Urdu

بارش

آنکھوں کی بارش میں بھیگنا چاہتا ہوں

یادوں کی بارش میں بھیگنا چاہتا ہوں

 

راہ زندگی کی کہانی دل میں دفن ہے۔

وعدوں کی بارش میں بھیگنا چاہتے ہیں۔

 

عشق آرزو ہے چاندنی نیتی۔

رات کو بارش میں بھیگنا چاہتے ہیں۔

 

بڑی فرصت سے پارٹی میں آئے ہیں۔

راگوں کی بارش میں بھیگنا چاہتا ہوں

 

آج پرامن طور پر حُسن کی موجودگی میں

باجوں کی بارش میں بھیگنا چاہتا ہوں۔

 

خوبصورت اور سچی محبت کا دوست

طنز کی بارش میں بھیگنا چاہتا ہوں

16-7-2023

 

 

تم موگرے کی کلی کی طرح جوان ہو۔

محبت کے شہر کا پل بنو

 

ہر روز ملنا چاہتے ہیں؟

تم پھول سے زیادہ خوبصورت ہو۔

 

سڑک ٹیڑھی ہو سکتی ہے

احتیاط سے چلو تم چھوٹے

 

حاصل کیے بغیر عمروں سے چاہ رہے ہیں۔

آج آپ کیا سوچ رہے ہیں

 

دستک نہیں سنو

خاموشی سے کہاں مگن ہو

17-7-2023

 

صحیفے پڑھنے سے کوئی پنڈت نہیں بنتا۔

محبت سازشوں سے نہیں ٹوٹتی

 

حادثاتی طور پر کچھ نہیں ہوتا

کوئی عمل پھل کے بغیر نہیں ہے

 

یادداشت سے باہر

انتظار ملاقات کے ساتھ نہیں ہے۔

 

اسے ذہن میں رکھیں تب تک یہ ٹھیک ہے۔

خون میں رہنا فائدہ مند نہیں ہے۔

 

دو چار دن میں

حاصل کرنے کی خواہش نہیں ہے؟

18-7-2023

 

شنکر نے زہر کا پیالہ پیا۔

اس کے گلے میں سانپ رہتے تھے۔

 

ہماچل میں دیوتا مہادیو کا خدا

لوگوں کو ڈرانے کے لیے ننگا ناچ کیا۔

19-7-2023

 

کسی کے ساتھ منسلک نہ ہو

سب کو دور سے سلام کرنا چاہیے۔

 

امن سے رہنے کی کوشش کریں۔

مضبوط رشتوں کو نہیں بھرنا چاہیے۔

 

زندگی میں اور بھی بہت سے دکھ ہیں۔

محبت کے لیے مرنا نہیں چاہیے۔

 

کھلی آنکھوں سے خواب دیکھتے رہو

روزانہ گہری نیند میں جانا چاہیے۔

 

کبھی کبھی خاموشی ضروری ہے

خاموشی سے مت ڈرو

 

 

لگاؤ تمام دکھوں کی جڑ ہے۔

زندگی خواہشات کا مجموعہ ہے۔

 

نہ جانے کیا عمر بھر تڑپتے رہے۔

دیکھو اندر گہرا گڑھا چھپا ہوا ہے۔

 

آج تک کوئی نہیں جانتا

کتنے دماغ میں چھپے ہیں

 

سب کچھ جاننے کے بعد آگے بڑھیں۔

وہ اپنے آپ سے کیوں لڑ رہا ہے؟

 

اکیلے رہو اکیلے رہنا سیکھو

جن کی یادیں بار بار روتی ہیں۔

20-7-2023

 

نظر کو ہپناٹائز نہیں کرنا چاہیے۔

مکمل عقل سے محروم نہیں ہونا چاہئے

 

جب خاموشی آواز بن جاتی ہے۔

خاموشی کو پسلیوں میں نہیں بونا چاہیے۔

 

بیکلی نے تباہی مچادی سن

غیر ضروری وقت میں نہیں سونا چاہیے۔

 

اگر ہو سکے تو اپنے آنسو روک لو

غیر ضروری بوجھ نہیں اٹھانا چاہیے۔

 

زندگی سکون سے گزاری جائے تو دوست

بے وفا پر مت رو

21-7-2023

 

محبت کو بھولنا اتنا آسان نہیں ہے۔

ساون کے مہینے میں یاد کرنا ضروری ہے۔

 

وہ میرا نہ سہی میری روح میں بستا ہے۔

سانسیں آتی جاتی رہتی ہیں۔

 

میرے دوست ہونے نے مجھے ڈبو دیا ہے۔

ہر وقت نشے میں رہنے کے لیے ایک بہانے کی ضرورت ہے۔

 

ایک تو تیرے پیار نے دیوانہ ہے مجھے بنایا

خدا کرے یہ خوشگوار موسم تمہاری جان نہ لے جائے۔

 

دنیا کے وہ لوگ جو بے نام دھاگوں میں جکڑے ہوئے ہیں۔

وہ ہماری محبت کو پریوں کی کہانی بنا دیں گے۔

22-7-2023

 

 

اچھا موسم اور تنہائی ہے۔

اللہ نے کیسی قسمت بنائی ہے

 

ہاتھوں میں جام، آنکھوں میں پیاس

پیا کی جدائی میں غزلیں سنائی گئی ہیں۔

 

ایک سے زیادہ ٹوٹے ہوئے دلوں کا

آج بھرے مجمع میں سماعت ہے۔

 

دن نشہ آور ہو گیا

جب سے ہم نے آنکھ سے دیکھا ہے۔

 

جو وفا کرتے تھے وہ بے وفا ہو گئے۔

میرا اپنا سایہ پیارا لگ رہا ہے۔

 

 

روشن ہے

23-7-2023

 

بوندا باندی سے بھیگ گیا

گرج چمک اور چمکتے بادلوں کے ساتھ رہتے تھے۔

 

ایسے خوشگوار لمحات بار بار نہیں آتے

موسم سے لطف اندوز ہو کر پیو

 

اجازت کی تلاش میں موم بتی جل رہی ہے۔

امید کے چراغ دن بیٹھے ہیں۔

 

محبت میں اتنے سستے ہو گئے ہیں

کبھی کبھی خود سے زیادہ پیار کرتا تھا۔

 

کس گلی میں، کس محفل میں اپنا دوست ڈھونڈتے ہو؟

کہاں چھپے ہو میا

24-7-2023

 

بجوریا دن رات چمک رہا ہے، یہاں کیوں؟

بتاؤ یہاں کون آنے والا ہے؟

 

یاد رہے گا دل میں یوں ہی یاد

کہ میں وہاں زندہ محسوس کرتا ہوں۔

 

میں تمہاری خاموشی میں تمہاری آواز بنوں گا۔

دل اور دماغ وہیں ہیں جہاں آپ رہتے ہیں۔

 

جب بھی میں سوچتا ہوں میں سنتا ہوں۔

کہاں سے آئے ہو اور کہاں جا رہے ہو؟

 

چونکہ یہ پتہ چلتا ہے کہ ہمارے پاس نہیں ہے۔

جگر کا درد آنسوؤں کی طرح بہہ رہا ہے۔

25-7-2023

 

تمام نعمتیں تیری محبت کے نام پر

تیرا نام ہماری محبت کی منزل ہے۔

 

زندگی کی کشتی کو پار کرنا ہے۔

حاصل کرنے کی منزل روحوں کو منانا ہے۔

 

ایک خالص جگر ہاتھ میں پکڑنا

آج سوئی ہوئی خواہشوں کو جگانا ہے۔

 

احساسات چھوٹے بچوں کی طرح ہوتے ہیں۔

مطلوبہ تحفہ کا لالچ دیں اور متاثر کریں۔

 

جو ایسا سوچتا ہے جیسا لگتا ہے۔

ہمارے پاس ایک مختلف کہانی ہے

 

دل سے شاندار رستے کھیلیں گے۔

دل سے گایا ہوا گانا سنیں۔

 

خوشی سے حقیقت کو قبول کرنا

اب تمام غلط فہمیوں کو دور کرنا ہے۔

26-7-2023

 

یہ سیلاب کیا تباہی مچائے گا؟

خود کو مارنے کے بعد اسے کیا سکون ملے گا؟

 

نہ سمت کا تعین ہے اور نہ اس کی رفتار معلوم ہے۔

کوئی نہیں جانتا کب آئے گا؟

 

آسمان کے ذریعے پہاڑوں کو چھونے

وہ اپنے ساتھ کیا لائے گا؟

 

پانی میں سونامی پیدا کرنا

ساحل سے ٹکرانے کے بعد وہ کیا گائے گا؟

 

کیا تباہی کا منظر دیکھ کر آپ کا پیٹ نہیں بھرا؟

لوگوں کی زندگیاں کیا کھائیں گے؟

27-7-2023

 

زندگی کے سمندر کی گہرائی کو کوئی نہ سمجھ سکا

محبت کے حادثات کی تنہائی کو کوئی نہ سمجھ سکا

 

 

نگوڈی سچ کو سامنے لاتے ہیں۔

کوئی یہ نہ سمجھ سکا کہ تقدیر آئینے کی طرح بنی ہے۔

 

 

یہ حادثہ روز ہوتا ہے، جان سے احتیاط کریں۔

ہر ملاقات کے بعد جدائی کو کوئی نہیں سمجھ سکتا تھا۔

 

میں پاس تھا پھر بھی دور لگتا ہے یہ کیسی محبت ہے

کوئی نہیں سمجھ سکا کہ خدا نے جوڑے کیوں بنائے

 

سارے خواب پھولوں کی طرح بکھر گئے۔

پیاری عورت اجنبی کیوں ہے، کوئی سمجھ نہیں سکا

28-7-2023